کیا دین اور دنیا الگ ہیں؟

جو لوگ یہ کہتے ہیں کے دین اور دنیا  الگ الگ ہیں یعنی دین کا عمل دخل دنیا میں عبادت کی ہد تک ہے اور یہ تھورےے بہت  قوانیدن اور ضابطے وضا  کرتا ہے زندگی گزارنے کے لییں اور بس ، تو پھر اس طرح کے لوگ اپنے اپ کو مندرجہ ذیل سوالوں کے جواب تو  دیں :

١) اس زمین کا خالق کون ؟

٢) اس آسمان کا خالق کون؟

٣) اس سورج ، چاند ، اور ستاروں کا خالق کون؟

٤) ہمارا خالق کون؟

٥) ہمیں سوچنے سمھجنے کی صلاحیت کس نے دی ؟

٦) ہمیں اچھے اور برے کی کس نے پہچان کروائی ؟

٧) وہ قوانین جو سائنس کے ذریے ہم دریافت کر رہے ہیں کس نے بناے ؟

٨) وہ چیزیں جنھیں ہم کھا پی کر زندہ ہیں کس نے پیدا کی ؟

 ٩) کیا اللہ ہماری بات سننے پے قادر ہے ؟

١٠ ) کیا وہ ہماری ہر بات سنتا اور ہر خیال جانتا ہے ؟

١١) کیا وہ ہمارا ہر عمل دیکھتا ہے ؟

١٢ ) کیا وہ ہماری نیتوں سے واقف ہے ؟

١٣) کیا جس طاقت کے ذریہ ہم اس دنیا میں عمل بجا لاتے ہیں اور ہماری اپنی  یعنی  ذاتی  ہے یا حاصل کی ہوئی  ہے ؟

١٤) کیا قیامت میں ہمارے عمل کا حساب ہو  گا ؟

١٥) کیا ہم اپنی مرضی سے ہر وہ  کام کر سکتے ہیں جس کا خیال ہمارے دل میں ائی ؟

٦ ١ ) کیا اگر وہ رسول نہ بھیجتا تو ہم اس اکبر ، سبحان ، علی، حی خدا کو پہچان سکتے ؟

٧ ١ ) آخرت کے لییں ثواب اور   ہم نیکیاں کہاں کماتے  ہیں ؟

١٨ ) کیا ہم نیکی اس کے حکم پے عمل کر کے کماتے ہیں یا جس کام کو ہم سہی سمجھے اس کام کی نیکی کا اجر الله دے گا ؟

١٩) کیا یہ دنیا آخرت کی کھیتی نہی ہے ؟

٢٠) کیا اس دنیا کی قدرتی موجودات کو ہم نے خلق کیا ہے ؟

٢١) کیا اجرام فلکی ہمارے تابے ہیں ؟

٢٢) کیا اس دنیا میں ہم اپنی مرضی سے ای ہیں ؟

٢٣) ہم کیوں پیدا ہووے ہیں ؟

٢٤) ہم کہاں جائیں گے ؟

٢٥) کیا الله اپنے علم سے ہر جگہ موجود نہی ؟

٢٦) کی قرآن میں ہر شی کا علم نہی ؟

٢٧) کیا موجودات الله کیا اجازت کی موہتاج نہی  کوئی بھی کام کرنے کے لیے ؟

٢٨) کیا الله موہتاج ہے اور اس کا علم ہر شی کا احاطہ نہی کرتا ؟

٢٩) کیا ہم الله کی مخلوق نہی ؟

تو پھر دین اور دنیا الگ کہاں ھوے ! دین تو آیا ہے دنیا کے لییں ہے تا کے اس پر عمل کر کے ہم آخرت کما سکیں اور یہ ہی وہ راستہ ہے جو ہمیں الله تک لے جاتا ہے. اگر ہم دنیا میں دین کو  محدود جانتے ہیں تو ہم بھٹکے ہووے ہیں

جب ان سے کہاجاتا ہے کہ جو کچھ خدا نے نازل کیا ہے اس کا اتباع کرو تو کہتے ہیں کہ ہم اس کا اتباع کریں گے جس پر ہم نے اپنے باپ دادا کوپایا ہے. کیا یہ ایسا ہی کریں گے چاہے ان کے باپ

 [2:170] دادا بے عقل ہی رہے ہوں اورہدایت یافتہ نہ رہے ہوں

(جو عاقل ہو گا وہ  دین دار ہو گا اور جو دین دار ہو گا وہ ہے جنّت میں جی گا . امام جعفر صادق (ع . س

(مومن کا یقین اس کے عمل سے ظاہر ہوتا ہے اور منافق کے عمل میں اس کا شک ظاہر ہوتا ہے. امام علی  (ع . س

 [2:208] ایمان والو! تم سب مکمل طریقہ سے اسلام میں داخل ہوجاؤ اور شیطانی اقدامات کا اتباع نہ کرو کہ وہ تمہارا کھلا ہوا دشمن ہے

میں نہ تو کوئی علم دین ہوں اور نہی ایسا کوئی دعوہ کرتا ہوں، البتہ الله نے مجھے انسان پیدا کیا لہٰذا عقل رکھتا اور اس کا استمال کرتا ہوں. میری یہ تحریر صرف اور صرف میری فکر کا آئنہ ہے. اگر اپ  سمھجتے ہیں کے میری اصلاح ہونی چاہے تو ضرور کریں.

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s